Language, Gender and Power
Banner3
Banner2
Banner 1

دارالعلوم دیوبند اورتاجِ برطانیہ کے خلاف مزاحمت

>دارالعلوم دیوبند اورتاجِ برطانیہ کے خلاف مزاحمت

1857ء کی جنگِ آزاد ی کے دوران ہندوستان کی بیرونی سامراج سے آزادی کے لیے معاشرے کے مختلف طبقات یکجاہوگئے تھے۔شاہ ولی اللہ کے پیروکاروں میں بہت سے مذہبی رہنمائوں نے بھی آزادی کی جدوجہد میں

ہڑپہ: یہ خزانے تجھے ممکن ہے خرابوں میں ملیں

ہڑپہ: یہ خزانے تجھے ممکن ہے خرابوں میں ملیں

اُس روز دُور دُور تک اُجلی دھوپ کا بسیرا تھا اور ہوا میں ہلکی خنکی کی آمیزش۔ میری منزل ساہیوال سے 27 کلومیٹر دور ہڑپہ تھی۔ ایک اندازے کے مطابق ساڑھے تین ہزار سال قبل مسیح اس تہذیب کا آغاز ہوا تھا۔ پرانی جگہوں پہ جانے

منو بھائی: تمہارے نام پہ آئیں گے غم گسار چلے

منو بھائی: تمہارے نام پہ آئیں گے غم گسار چلے

ہال میں تاریکی ہے لیکن دیوار پر لگی بڑی سکرین پر بیتے ہوئے دن روشن ہو گئے ہیں۔ مشاعرہ اپنے عروج پر ہے‘ منو بھائی نیلے رنگ کے کُرتے میں ملبوس مائیک کے سامنے بیٹھے اپنی مقبول پنجابی نظم ”احتساب دے چیف کمشنرصاحب بہادر!‘‘ سنارہے ہیں

تعلیمی اداروں میں ادبیات کی اہمیت

تعلیمی اداروں میں ادبیات کی اہمیت

ہمارے معاشرے میں عدم رواداری اور برداشت کے فقدان کے حوالے سے مختلف حلقوں میں تشویش پائی جاتی ہے۔ عدم رواداری اور انتہا پسندی کا میل(Nexus) بعض اوقات تشددکے رویے کو جنم دیتا ہے۔ کچھ عرصہ پیشتر

رائے احمد خان کھرل: پنجابی مزاحمت کا استعارہ

رائے احمد خان کھرل: پنجابی مزاحمت کا استعارہ

وہ ایک خواب جیسا منظر تھا سفید دودھیا ٹائلوں سے بارہ دری کی طرز پر بنا ایک جپوترہ۔ اس کے اطراف میں اونچے لمبے درختوں کا ہجوم۔ فضا میں دیہاتوں کی دوپہروں کی ٹھہری ہوئی خاموشی۔ کچھ ہی فاصلے پر ایک مختصر سا گائوں